64

افغانستان میں داعش گروہ کے لئے امریکہ کی حمایت

طالبان گروہ نے اعلان کیا ہے کہ امریکی جنگی طیاروں نے داعش دہشت گرد گروہ کی حمایت میں مشرقی افغانستان میں طالبان کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق طالبان گروہ کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے بدھ کے روز ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ امریکی جنگی طیاروں نے صوبے ننگرہار کے علاقے خوگیانی میں داعش دہشت گرد گروہ کی حمایت میں طالبان گروہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔

طالبان کے بقول امریکہ نے ایسی حالت میں طالبان گروہ کے ٹھکانوں پر حملہ کیا ہے کہ اس گروہ نے خوگیانی کے علاقے میں داعش دہشت گرد گروہ کا محاصرہ کر رکھا ہے۔

طالبان گروہ کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کے مطابق امریکی جنگی طیاروں کے اس حملے میں طالبان گروہ کے کم از کم بیس عناصر ہلاک ہو گئے۔

اس ترجمان کا کہنا ہے کہ امریکہ اس سے قبل بھی ایسے علاقوں میں طالبان گروہ کے عناصر کو اپنے حملوں کا نشانہ بنا چکا ہے جہاں داعش دہشت گرد گروہ کا محاصرہ جاری تھا تا کہ اس دہشت گرد گروہ کے عناصر کو تحفظ فراہم کیا جا سکے۔

افغانستان کے بیشتر اراکین پارلیمنٹ اور سینیٹروں نیز سیاسی و فوجی حکام و ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ افغانستان میں داعش دہشت گرد گروہ کی بھرپور حمایت کر رہا ہے۔

دوسری جانب افغانستان کے امور میں روس کے نمائندے ضمیر کابلوف نے کہا ہے کہ افغانستان و پاکستان کی مشترکہ سرحدوں پر دو ہزار پانچ سو داعشی دہشت گرد موجود ہیں۔

انھوں نے کہا کہ افغانستان و پاکستان کی مشترکہ سرحدوں پر موجود بیشتر داعشی دہشت گردوں کا تعلق وسطی ایشیا کے ملکوں سے ہے۔

داعش دہشت گرد گروہ کے ان عناصر کی موجودگی کا مقصد غیر ملکی فوجیوں کا مقابلہ کرنا نہیں بلکہ وسطی ایشیا کی سیکورٹی کی صورت حال کو درہم برہم کرنا ہے۔

کابلوف نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ علاقے میں روسی فوجی داعش دہشت گرد گروہ کی سرگرمیوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں کہا ہے کہ یہ دہشت گرد علاقے کے ملکوں میں اپنا اثر روسوخ بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

دری اثنا مغربی افغانستان میں ہونے والی الگ الگ جھڑپوں میں متعدد افغان فوجی اہلکاروں کے علاوہ اٹھائیس طالبان عناصر ہلاک ہو گئے۔

افغانستان کی وزارت داخلہ نے اعلان کیا ہے کہ صوبے فراہ کے علاقے برنکتوت میں افغان سیکورٹی اہلکاروں کے آپریشن میں طالبان گروہ کے اٹھارہ عناصر ہلاک اور نو دیگر زخمی ہو گئے۔

اس علاقے میں ہونے والی جھڑپ کے دوران طالبان گروہ کے عناصر سے کافی مقدار میں اسلحہ بھی ضبط کر لیا گیا۔

دوسری جانب صوب نیمروز میں طالبان کے ایک حملے میں چھے افغان پولیس اہلکار ہلاک اور دو دیگر زخمی ہو گئے۔

صوبے نیمروز کے چخانسور کی انتظامیہ کے سربراہ حبیب اللہ اسد نے اعلان کیا ہے کہ جھڑپ کا سلسلہ اس وقت شروع ہوا جب طالبان گروہ نے پولیس کی ایک چیک پوسٹ پر حملہ کر دیا۔ اس جھڑپ میں طالبان گروہ کے بھی چار عناصر ہلاک اور دو دیگر زخمی ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں