12

ایران میں موجود اوورسیز پاکستانیز کئی ماہ سے پاسپورٹ کے منتظر، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی سے مشکل حل کرنے کا مطالبہ

پاکستان اور ایران کے درمیان کوریئر سروس معطل ہونے کے بعد ایران میں موجود ہزاروں پاکستانیز نئے پاسپورٹ کے انتظار میں دھکے کھانے پر مجبور، زائرین اور اوورسیز پاکستانیز مشکلات کا شکار، ذرائع کے مطابق گذشتہ تین ماہ سے ایران میں مقیم پاکستانی اپنے شناختی کارڈز اور پاسپورٹ کے سسٹم کی خرابی اور تیارشدہ ڈاکومنٹس کے لئے استعمال ہونے والی کورئیر سروس پر اعتراض اور متعلقہ اداروں کے حکام کی طرف سے متبادل ذرائع تلاش نہ کرنے کی وجہ سے ایران میں مقیم پاکستانی سخت پریشان ہیں، ایران میں مقیم طلاب اقاموں کی تجدید وغیرہ رکنے کی وجہ سے انہیں اس تاخیر پر قانونی چارہ جوئی کا سامنا، روزانہ کی تاخیر کے حساب سے جرمانے کا سامنا، اطلاعات کے مطابق پریشان پاکستانی کمیونٹی کے افراد بار بار تہران اور مشہد میں قائم قونصل خانوں اور سفارت میں رابطہ کر رہے ہیں، جن کا مطالبہ ہے کہ وزارت خارجہ اور اورسیز پاکستانیوں کے متعلقہ ذمہ داران اس مشکل کو حل کرنے کے لئے عملی اقدام کریں۔ ایران کے شہر مشہد میں سفارتخانے کے باہر موجود طلاب اور زائرین نے بتایا کہ مسلسل 2ماہ سے سفارتخانے کے چکر لگا رہے ہیں لیکن ابھی تک ہمارے پاسپورٹ نہیں ملے جس کی وجہ سے روزانہ کی بنیاد پر 45ہزار (ایرانی) جرمانہ لگ رہا ہے، پاسپورٹ نہ ملنے کی وجہ سے ہمیں سفری مشکلات درپیش ہیں، مشہد میں سفارتخانے کے ذرائع کے مطابق اکتوبر میں آخری بار پاکستان سے ایران پاسپورٹ پہنچے تھے دو مہینے ہونے کو ہیں ابھی تک پاکستان سے پاسپورٹ کی ڈلیوری نہیں ہوئی، تہران میں موجود سفارتخانے کے باہر موجود پاکستانیوں نے پاکستانی وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی سے مطالبہ کیا ہے کہ دنیا کے دیگر ممالک اور مشنز کی تہران میں درپیش آنے والی مشکل فوری حل کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں