14

3 ارب ڈالر کا مالیاتی پیکیج، اسٹاک ایکسچینج میں تیزی، شیئرز کی مالیت 1 کھرب 42 ارب بڑھ گئی

متحدہ عرب امارات کے ولی عہدکے دورۂ پاکستان میں ادائیگیوں کے توازن میں بہتری، اقتصادی شعبوں تعاون اور 3 ارب ڈالر کے مالیاتی پیکیج دیے جانے کے باعث پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں پیرکوتیزی کی بڑی لہر رونما ہوئی جس سے انڈیکس کی 38500 پوائنٹس کی نفسیاتی حد بحال ہوگئی۔

تیزی کے سبب 67 اعشاریہ 53 فیصد حصص کی قیمتیں بڑھ گئیں جبکہ حصص کی مالیت میں 1 کھرب 42 ارب 88 کروڑ 65 لاکھ 50 ہزار 753 روپے کا اضافہ ہوگیا۔ ماہرین اسٹاک کا کہنا تھا کہ مثبت خبروں اور نئی مانیٹری پالیسی میں شرح سود نہ بڑھنے کی توقعات پر انسٹی ٹیوشنز، میوچل فنڈز اور دیگر شعبوں نے مارکیٹ میں تازہ سرمایہ کاری کی جس سے کاروبار کے تمام دورانیے میں مارکیٹ مثبت زون میں رہی۔

تیزی کے سبب کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس 1014 اعشاریہ 91 پوائنٹس کے اضافے سے 38562 اعشاریہ 40 ہوگیا۔ کاروباری حجم گذشتہ جمعے کی نسبت144فیصد زائد رہا۔ کاروباری سرگرمیوں کا دائرہ کار 345 کمپنیوں کے حصص تک محدود رہا جن میں 233 کے بھاؤ میں اضافہ، 90کے داموں میں کمی
اور 22 کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ جن کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں نمایاں اضافہ ہوا ان میں ماڑی پیٹرولیم، سیمینس پاکستان نمایاں رہیںجبکہ الغازی ٹریکٹر اور شیزان انٹرنیشنل کے بھاو کم ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں